Take a fresh look at your lifestyle.

پاکستان کے سیاسی حالات۔۔۔تجزیہ ۔۔۔شہزادقریشی       

15

پاک فوج کی قربانیوں کونظرانداز نہیں کیا جاسکتا

خدارا! ہوس اقتدار کیلئے ملکی سلامتی کو داؤ پر نہ لگائیں

سیاستدانوں کے متنازعہ بیانات المیہ، بے ہودگی سے باز رہیں

ہالینڈ(ڈیلی روشنی انٹرنیشنل ۔۔۔تجزیہ۔۔۔شہز ادقریشی)افواج پاکستان داخلی سلامتی کیلئے دن رات ایک کر رہی ہے ، ملک سے دہشت گردی کا خاتمہ کر کےسلک کوترقی کی راہ پر ڈالنے میں پاک فوج اور سلامتی کے اداروں کے کردار کو فراموش نہیں کیا جاسکتا، پاک فوج اور ہمارے قومی سلامتی کے ادارے آئی ئیں آئی کے خلاف عالمی سطح پر پرو پیگنڈہ کیا جاتا رہا، ریمنڈ ڈیوس کی کتاب جو سراسر جھوٹ پر مبنی کتاب بھی اس کے ذریعے ہماری مسلح افواج اور آئی ایس آئی کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا، بلاشبہ ملک میں سیاسی حالات کی وجہ سے ملک میں غیر یقینی صورتحال ہے تاہم مجھ سے بالا تر ہے کہ ہماری سیاسی جماعتیں اقتدار سے الگ ہو کر پاک فوج کو اپنا نشانہ کیوں بناتی ہیں؟ اس کو بدقسمتی ہی کہا جاسکتا ہے کہ ہمارے سیاستدانوں نے ہوس اقتدار کے لئے ملکی سلامتی کو بھی پس پشت ڈال دیا ہے یہ بات ہمارے سیاستدانوں کو سمجھ کیوں نہیں آتی کہ سیاست سے زیادہ ریاست اہم ہوتی ہے، دنیا کی کوئی بھی ریاست اداروں کے بغیر نہیں چلتی ، ادارے آئین کے پابند ہوتے ہیں وہ اپنا کردار آئینی طریقے سے ہی ادا کرتے ہیں، ملک کی سیاسی تاریخ گواہ ہے کہ ان سیاست اور جمہوریت کے علمبرداروں نے اپنی غلطیوں پر پردہ ڈالنےکے لئے موردالزام ریاست کے اہم ترین اداروں کو ظہرایا اور جمہور سے اپنی گردن بچالی ، اس طرح کی گفتگو اور الزامات سیاسی بیان تو ہو سکتے ہیں صداقت کا عنصر موجود نہیں ہوتا، سیاستدان اپنے رویوں میں تبد یلی لائیں پاک فوج عوام کی ہے اور فوج عوام میں سے ہے اور میخوام کے اور ملک کے وفادار ہیں ،سیاسی جماعتوں کو روایتی سیاست کی بجاۓ سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا چاہیے ملکی سلامتی اور مستقبل کو سامنے رکھ کر سیاست کرنی چاہیے، ملک ایک ایسے خطے میں ہے جہاں عالمی طاقتوں کے مفاد وابستہ ہیں یہ عالمی طاقتیں اپنے مفادات کے لئے پاکستان میں کوئی نہ کوئی کھیل جاری رکھتی ہیں ان سازشوں پر پاک فوج اور قومی سلامتی کے اداروں کی گہری نظر ہوتی ہے جس سے وہ عوام کو بھی خبر دار کر تے رہتے ہیں ،تحریک انصاف ہو یا پیپلز پارٹی یا پھر ن لیگ یا مذہبی سیاسی جماعتیں ملکی سرحدوں کی حفاظت کرنے والے اداروں اور عدلیہ پر اپنے جلسوں چوراہوں، گلی کوچوں، سوشل میڈ یا پر بے ہودہ بیان بازی سے باز رہیں اور یہ قومی سلامتی اور قومی فریضہ ہے کہ ہم اپنے ان

اداروں کو اپنے آئینی کردار ادا کرنے دیں ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.